You are currently viewing سورہ فلق، جسے روز بروز بھی کہا جاتا ہے، قرآن کا 113 واں باب ہے
surah falaq, jis roz baroz bhi kaha jata hai, quran ka 113 wahan baap hai

سورہ فلق، جسے روز بروز بھی کہا جاتا ہے، قرآن کا 113 واں باب ہے

  • Post author:
  • Post category:Quran Pak

سورہ فلق، جسے روز بروز بھی کہا جاتا ہے، قرآن کا 113 واں باب ہے۔ یہ ایک مختصر سورت ہے جو صرف پانچ آیات پر مشتمل ہے۔ اس سورت کا آغاز حضرت محمد صلی اللہ علیہ وسلم سے ہوتا ہے اللہ کی پناہ مانگتے ہوئے ان تمام چیزوں کے شر سے جو اس نے پیدا کی ہیں۔ پھر وہ رات کی برائی سے پناہ مانگتا ہے جب وہ پڑتی ہے، گرہیں پھونکنے والوں کے شر سے اور حسد کرنے والوں کے شر سے جب وہ حسد کرتے ہیں۔

سورہ فلق اللہ کی قدرت اور اس کی حفاظت کی ایک طاقتور یاد دہانی ہے۔ یہ ایک یاد دہانی ہے کہ ہمیں ہر وقت ہر برائی سے اس کی پناہ مانگنی چاہیے۔ یہ سورہ ایک یاد دہانی بھی ہے کہ ہمیں ان لوگوں سے ہوشیار رہنا چاہیے جو جادو اور کالا جادو کرتے ہیں۔

سورہ فلق کو اکثر مختلف قسم کی برائیوں سے بچاؤ کے لیے پڑھا جاتا ہے جن میں حسد، جادو اور نظر بد شامل ہیں۔ یہ اکثر سونے سے پہلے بھی پڑھا جاتا ہے، کیونکہ یہ خیال کیا جاتا ہے کہ یہ اچھی طرح سے سونے میں مدد کرتا ہے۔

سورہ فلق کی ہر آیت کی مختصر تشریح یہ ہے:

آیت 1: “کہو، ‘میں صبح کے رب کی پناہ مانگتا ہوں’۔
اس آیت کا آغاز حضرت محمد صلی اللہ علیہ وسلم کے اللہ سے پناہ مانگنے سے ہوتا ہے جو طلوع فجر کے رب ہے۔ طلوع فجر نئی شروعات کی علامت ہے، اور یہ ایک یاد دہانی ہے کہ تبدیلی اور تبدیلی لانے والا اللہ ہی ہے۔

آیت 2: “اس چیز کے شر سے جو اس نے پیدا کی ہے۔”
یہ آیت اللہ سے ان تمام چیزوں کے شر سے پناہ مانگتی ہے جو اس نے پیدا کی ہیں۔ اس میں انسانوں، جنوں اور جانوروں کی برائیاں شامل ہیں۔ اس میں قدرتی آفات اور دیگر آفات کی برائی بھی شامل ہے۔

آیت 3: “اور اندھیرے کے شر سے جب وہ گرے۔”
اس آیت میں اللہ تعالیٰ سے رات کے شر سے پناہ مانگی گئی ہے۔ رات ایک ایسا وقت ہے جب لوگ حملہ کرنے کا زیادہ خطرہ رکھتے ہیں، اور یہ ایک ایسا وقت بھی ہے جب کہا جاتا ہے کہ بری روحیں زیادہ سرگرم ہوتی ہیں۔

آیت 4: “اور گرہیں پھونکنے والوں کے شر سے۔”
یہ آیت اللہ سے جادو کرنے والوں کے شر سے پناہ مانگتی ہے۔ چڑیلوں کے بارے میں کہا جاتا ہے کہ وہ گرہیں اڑا کر لوگوں کو نقصان پہنچا سکتی ہیں۔

آیت 5: “اور حسد کرنے والے کے شر سے جب وہ حسد کرے۔”
یہ آیت اللہ سے حاسدوں کے شر سے پناہ مانگتی ہے۔ حسد ایک طاقتور جذبہ ہے جو لوگوں کو نقصان پہنچا سکتا ہے۔

سورہ فلق ایک طاقتور اور خوبصورت سورت ہے جو ہمیں برائی سے انتہائی ضروری تحفظ فراہم کر سکتی ہے۔ یہ اللہ کی قدرت اور اس کی رحمت کی یاد دہانی ہے۔