You are currently viewing سورہ سبا کا نام ایک شہر جسے  “شیبا” کہا جاتا ہے سے منسوخ ہے اور یہ قرآن کا 34 واں باب  ہے
surah Saba ka naam aik shehar jesy Shiba " kaha jata hai se mansokh hai quran ka or ye 34 wahn baab hay

سورہ سبا کا نام ایک شہر جسے “شیبا” کہا جاتا ہے سے منسوخ ہے اور یہ قرآن کا 34 واں باب ہے

  • Post author:
  • Post category:Quran Pak

سورہ سبا (عربی: سبأ، سبا’؛ شہر سے جسے “شیبا” کہا جاتا ہے) قرآن کا 34 واں باب (سورہ) ہے جس میں 54 آیات (آیات) ہیں۔ اس میں سلیمان اور داؤد کی زندگیوں پر بحث کی گئی ہے،

سورہ سبا (عربی: سبأ، سبا’؛ شہر سے جسے “شیبا” کہا جاتا ہے) قرآن کا 34 واں باب (سورہ) ہے جس میں 54 آیات (آیات) ہیں۔ اس میں سلیمان اور داؤد کی زندگیوں پر بحث کی گئی ہے، شیبہ کے لوگوں کے بارے میں ایک کہانی، کافروں کے خلاف چیلنجز اور انتباہات کے ساتھ ساتھ قیامت سے متعلق وعدوں کا بھی ذکر ہے۔عقیدہ وحی کے وقت اور سیاق و سباق کے پس منظر کے بارے میں، یہ ایک پہلے کی “مکّی سورت” ہے، جس کا مطلب ہے کہ یہ بعد میں مدینہ کے بجائے مکہ میں نازل ہوئی ہے۔آیات 15-19 میں شیبا کے نامی لوگوں کے بارے میں ایک کہانی ہے۔ یہ کہانی قدیم سبائیوں پر مبنی ہے جو یمن کے وسطی نشیبی علاقوں میں رہتے تھے۔ آیات کے مطابق، وہ اصل میں خوشحال تھے، لیکن عبادت اور خدا کا شکر ادا کرنے سے پھر گئے، اور اس کے نتیجے میں سیلاب کا سامنا کرنا پڑا۔ کہانی کو دنیاوی غرور اور تکبر کے خلاف ایک انتباہ کے طور پر پیش کیا گیا ہے۔ سامی ماہر فلکیات A.F.L. Beesto نے اس کہانی کوماریبنخلستان کے خوشحال سبینوں سے جوڑا جو وادی کے ہر طرف آباد تھے (اس لیے آیت 15 میں “دائیں کا باغ” اور “بائیں کا” حوالہ دیا گیا ہے۔سورت کا آغاز خدا کی حاکمیت اور حمد کے اعلان سے ہوتا ہے۔ اس کے بعد شیبا کی بادشاہی کی وضاحت کرتا ہے، جو ایک خوشحال اور طاقتور قوم تھی۔ تاہم، سبا کے لوگ مغرور ہو گئے اور خدا سے منہ موڑ لیا۔ سزا کے طور پر، خدا نے ایک سیلاب بھیجا جس نے ان کی سلطنت کو تباہ کر دیا۔اس کے بعد سورہ نبی محمد اور ان کے پیروکاروں کی طرف متوجہ ہوتی ہے۔ یہ انہیں ظلم و ستم کے مقابلہ میں صبر اور ثابت قدم رہنے کی ترغیب دیتا ہے۔ یہ انہیں یہ بھی یاد دلاتا ہے کہ خدا انہیں ان کی فرمانبرداری کا بدلہ دے گا۔سورہ کا اختتام کافروں کے لیے ایک تنبیہ پر ہوتا ہے۔ یہ بتاتا ہے کہ انہیں قیامت کے دن سزا دی جائے گی۔ یہ انہیں یہ بھی بتاتا ہے کہ انہیں جنت میں داخلے سے منع کر دیا جائے گا۔سورہ سبا خدا کی قدرت اور حاکمیت کی یاددہانی ہے۔ یہ ہمیں اطاعت اور صبر کی اہمیت بھی سکھاتا ہے۔ یہ سورت مسلمانوں کے لیے رہنمائی کا ایک قیمتی ذریعہ ہے، اور یہ ہماری زندگیوں کو خدا کی مرضی کے مطابق گزارنے میں مدد کر سکتی ہے۔