You are currently viewing سورہ حدید آیت 25 قرآن کی ایک آیت ہے جو انصاف کی اہمیت اور اللہ کی قدرت کے بارے میں بتاتی ہے
surah Hadid ayat 25 quran ki aik aayat hai jo insaaf ki ahmiyat aur Allah ki qudrat ke baray mein batati hai

سورہ حدید آیت 25 قرآن کی ایک آیت ہے جو انصاف کی اہمیت اور اللہ کی قدرت کے بارے میں بتاتی ہے

  • Post author:
  • Post category:Quran Pak

سورہ حدید آیت 25 قرآن کی ایک آیت ہے جو انصاف کی اہمیت اور اللہ کی قدرت کے بارے میں بتاتی ہے۔ آیت کا آغاز یہ کہہ کر ہوتا ہے کہ اللہ نے اپنے رسولوں کو واضح دلائل کے ساتھ بھیجا اور ان کے ساتھ کتاب اور میزان عدل نازل کیا۔ اس کا مطلب یہ ہے کہ انبیاء لوگوں کو خدا کی مرضی کے بارے میں سکھانے اور دنیا میں انصاف قائم کرنے میں ان کی مدد کرنے کے لیے بھیجے گئے تھے۔ آیت پھر یہ کہتی ہے کہ اللہ نے لوہا نازل کیا، جو ایک طاقتور مواد ہے جو اچھے اور برے دونوں کے لیے استعمال کیا جا سکتا ہے۔ اس کا مطلب یہ ہے کہ اللہ تعالیٰ نے انسانوں کو یہ اختیار دیا ہے کہ وہ انصاف اور ناانصافی میں سے کسی ایک کا انتخاب کریں۔ آیت کا اختتام یہ کہہ کر ہوتا ہے کہ اللہ جان لے گا کہ کون اس کی اور اس کے رسولوں کی حمایت کرتا ہے، چاہے وہ کھلم کھلا ایسا نہ کریں۔ اس کا مطلب یہ ہے کہ انصاف کے لیے کام کرنے والوں کو اللہ اجر دے گا، چاہے وہ ان کی کوششوں کی وجہ سے پہچانے نہ جائیں۔

مختصر یہ کہ سورہ حدید آیت 25 انصاف کی اہمیت اور اللہ کی قدرت کی یاددہانی ہے۔ یہ ہمیں سکھاتا ہے کہ ہمیں دنیا میں انصاف قائم کرنے کی کوشش کرنی چاہیے، اور یہ کہ اللہ ایسا کرنے والوں کو جزا دے گا۔

اس آیت کی مزید تفصیل یہ ہے:

’’بے شک ہم نے اپنے رسولوں کو واضح دلیلوں کے ساتھ بھیجا اور ان کے ساتھ ہم نے کتاب اور میزان عدل نازل کیا تاکہ لوگ انصاف کریں۔‘‘
یہ آیت ہمیں بتاتی ہے کہ اللہ نے اپنے نبیوں کو لوگوں کو اپنی مرضی کے بارے میں سکھانے اور دنیا میں انصاف قائم کرنے میں ان کی مدد کرنے کے لیے بھیجا ہے۔ صحیفہ، یا قرآن، ایک رہنما ہے جو لوگوں کو خدا کے قوانین کے بارے میں اور ایک صالح زندگی گزارنے کے بارے میں سکھاتا ہے۔ انصاف کا توازن انصاف اور مساوات کی علامت ہے۔ جب لوگ قرآن کی پیروی کرتے ہیں اور انصاف کو برقرار رکھتے ہیں، تو وہ خدا کی مرضی کی پیروی کر رہے ہیں اور دنیا کو ایک بہتر جگہ بنانے میں مدد کر رہے ہیں۔

“اور ہم نے لوہے کو اس کی زبردست طاقت کے ساتھ اتارا، انسانیت کے لیے فائدے، اور اللہ کے لیے یہ ثابت کرنے کے لیے کہ کون اس کو دیکھے بغیر اس کے اور اس کے رسولوں کے لیے کھڑا ہونا چاہتا ہے۔”
آئرن ایک طاقتور مواد ہے جو اچھے اور برے دونوں کے لیے استعمال کیا جا سکتا ہے۔ اسے ہتھیار اور اوزار بنانے کے لیے استعمال کیا جا سکتا ہے آیت ہمیں بتاتی ہے کہ اللہ نے لوہے کو اس لیے اتارا تاکہ لوگ اسے بھلائی کے لیے استعمال کریں۔ یہ بھی بتاتا ہے کہ لوہا ایمان کا امتحان ہے۔ جو لوگ لوہے کو بھلائی کے لیے استعمال کرتے ہیں وہ اللہ اور اس کے رسولوں کی حمایت کر رہے ہیں، چاہے وہ کھلے عام کیوں نہ کریں۔

“بے شک اللہ سب پر غالب اور غالب ہے۔”
آیت کا اختتام ہمیں یاد دلانے پر ہوتا ہے کہ اللہ قادر مطلق اور قادر مطلق ہے۔ وہی ہے جس نے کائنات اور اس میں موجود ہر چیز کو پیدا کیا۔ وہی ہے جس نے اپنے نبی بھیجے اور قرآن نازل کیا۔ ہمیں اللہ پر بھروسہ کرنا چاہیے اور اس کی ہدایت پر عمل کرنا چاہیے۔ اگر ہم ایسا کریں گے تو ہمیں آخرت میں اجر ملے گا۔