You are currently viewing سورہ کا نام عربی لفظ “غافر” کے نام پر رکھا گیا ہے جس کا مطلب ہے “معاف کرنے والا” یا “گناہوں کو چھپانے والا
surah ka naam arabi lafz" Ghafir " ke naam par rakha gaya hai jis ka matlab hai" maaf karne wala" ya" gunaho ko chupane wala

سورہ کا نام عربی لفظ “غافر” کے نام پر رکھا گیا ہے جس کا مطلب ہے “معاف کرنے والا” یا “گناہوں کو چھپانے والا

  • Post author:
  • Post category:Quran Pak

سورہ غافر، جسے سورہ المومن بھی کہا جاتا ہے، قرآن کا 40 واں باب ہے۔ اس میں 85 آیات ہیں اور یہ مکی سورہ ہے، یعنی یہ نبی اکرم صلی اللہ علیہ وسلم پر مدینہ ہجرت سے پہلے نازل ہوئی تھی۔

سورہ کا نام عربی لفظ “غافر” کے نام پر رکھا گیا ہے جس کا مطلب ہے “معاف کرنے والا” یا “گناہوں کو چھپانے والا”۔ سورہ اللہ (SWT) اور یوم آخرت پر ایمان کی اہمیت پر زور دیتی ہے، اور کفر اور نافرمانی کے نتائج سے خبردار کرتی ہے۔

اس سورت میں حضرت موسیٰ (ع) اور فرعون کے ساتھ ان کے مقابلے کا قصہ بھی بیان کیا گیا ہے اور فرعون اور اس کی قوم کو ان کے تکبر اور کفر کی سزا کس طرح دی گئی تھی۔ اس میں نوح (ع)، ہود (ع)، صالح (ع)، اور لوط (ع) جیسے دیگر انبیاء کے قصے بھی بیان کیے گئے ہیں، اور ان کی قوم نے ان کے پیغام کو کیسے رد کیا اور انہیں سزا دی گئی۔

سورہ میں اللہ (SWT) سے معافی مانگنے اور اس کی طرف رجوع کرنے کی اہمیت پر بھی زور دیا گیا ہے، کیونکہ وہ انتہائی بخشنے والا اور رحم کرنے والا ہے۔ یہ مومنوں کو اپنے ایمان پر صبر اور ثابت قدم رہنے اور ہر حال میں اللہ (SWT) پر بھروسہ کرنے کی ترغیب دیتا ہے۔

مجموعی طور پر، سورہ غافر ہمیں ایمان، توبہ، اور اللہ سبحانہ و تعالیٰ سے معافی مانگنے کی اہمیت کے بارے میں سکھاتی ہے، اور کفر اور نافرمانی کے نتائج سے خبردار کرتی ہے۔