You are currently viewing سورۃ الناس قرآن کا 114 واں اور آخری باب ے۔ یہ چھ آیتوں پر مشتمل ایک مختصر دعا ہے
surah al nas quran ki 114 wahan aur aakhri bhabhi hey ye chay ayaton par mushtamil aik mukhtasir dua hai

سورۃ الناس قرآن کا 114 واں اور آخری باب ے۔ یہ چھ آیتوں پر مشتمل ایک مختصر دعا ہے

  • Post author:
  • Post category:Quran Pak

سورۃ الناس (عربی: سورة الناس، “انسانیت”) قرآن کا 114 واں اور آخری باب (سورۃ) ہے۔ یہ چھ آیتوں پر مشتمل ایک مختصر دعا ہے جو جنوں (غیر مرئی مخلوق) اور انسانوں کے شر سے حفاظت چاہتی ہے۔

سورہ کا آغاز اس جملے سے ہوتا ہے “کہہ دو کہ میں انسانوں کے رب کی پناہ مانگتا ہوں،” جو تین بار دہرائی گئی ہے۔ پہلی دو آیات میں اللہ کو انسانوں کا رب، بنی نوع انسان کا حاکم اور بنی نوع انسان کا خدا کہا گیا ہے۔ تیسری آیت وسواس (سرگوشی کرنے والے) کی برائی کی طرف اشارہ کرتی ہے، جسے خناس کہا جاتا ہے، پیچھے ہٹنے والا۔ وسواس کو جن یا انسان سمجھا جاتا ہے جو لوگوں کے دلوں میں برے خیالات ڈالتا ہے۔سورہ کا اختتام “جنوں اور انسانوں میں سے” کے جملہ پر ہوتا ہے۔ اس سے ظاہر ہوتا ہے کہ جو تحفظ طلب کیا گیا ہے وہ تمام شیطانی مخلوقات سے ہے، چاہے وہ جن ہوں یا انسان۔سورۃ الناس کو قرآن مجید کی اہم ترین سورتوں میں سے ایک سمجھا جاتا ہے۔ یہ اکثر برائی سے حفاظت کے طور پر پڑھا جاتا ہے، اور یہ صبح اور شام کی نمازوں کے حصے کے طور پر بھی پڑھا جاتا ہے۔سورۃ الناس کا انگریزی ترجمہ یہ ہے:کہہ دو کہ میں لوگوں کے رب کی پناہ مانگتا ہوںبنی نوع انسان کا حاکم،انسانوں کا خدا،چپکے چپکے سرگوشی کرنے والے کے شر سے،جو بنی نوع انسان کے دلوں میں وسوسہ ڈالتا ہےجنوں اور انسانوں میں سے۔”سورۃ الناس ہر برائی سے اللہ کی پناہ مانگنے کی اہمیت کی ایک طاقتور یاددہانی ہے۔ یہ حفظ کرنے کے لیے ایک مختصر اور آسان سورت ہے، اور اسے کسی بھی وقت، کہیں بھی پڑھا جا سکتا ہے۔ اگر آپ بے چینی یا خوف محسوس کر رہے ہیں، یا اگر آپ محض اللہ کی رہنمائی اور حفاظت کے خواہاں ہیں، تو سورۃ الناس کی تلاوت ایسا کرنے کا بہترین طریقہ ہے۔