You are currently viewing اسلام میں بھو کے کو کھا نا کھلانے کو بہت ثواب ملتا ہے
islam mein bhukhe ko khana khilane ka bahut sawab milta hai

اسلام میں بھو کے کو کھا نا کھلانے کو بہت ثواب ملتا ہے

  • Post author:
  • Post category:Ahadees

اسلام میں بھوکوں کو کھانا کھلانے کی اہمیت کے بارے میں بہت سی احادیث موجود ہیں۔ یہاں چند مثالیں ہیں:اسلام میں بھو کو ں کو کھانا کھلانے کا بہت ثواب ہے ابوہریرہ رضی اللہ عنہ سے روایت ہےرسول اللہ صلی اللہ علیہ وسلم نے فرمایا: ”روزہ دار کو کھانا کھلانے والے کو اس کے برابر ثواب ملے گا، بغیر اس کے کہ روزہ دار کے ثواب میں کوئی کمی ہو گی۔ (صحیح البخاری)

سہل بن سعد سے روایت ہے:
رسول اللہ صلی اللہ علیہ وسلم نے فرمایا: اللہ کے نزدیک سب سے پسندیدہ عمل بھوکے کو کھانا کھلانا، قیدی کو آزاد کرنا اور رشتہ داریاں نبھانا ہے۔ (صحیح البخاری)ابوذر رضی اللہ عنہ سے روایت ہے:
رسول اللہ صلی اللہ علیہ وسلم نے فرمایا جو مومن کسی بھوکے مومن کو کھانا کھلائے اللہ تعالیٰ اسے قیامت کے دن جنت کے پھلوں میں سے کھلائے گا۔ (سنن الترمذی)
یہ احادیث اسلام میں بھوکوں کو کھانا کھلانے کی اہمیت کو واضح کرتی ہیں۔ بھوکوں کو کھانا کھلانا ہمدردی اور رحم کا ایک طریقہ ہے اور یہ اللہ کے انعامات کمانے کا بھی ایک طریقہ ہے۔ رمضان کے مہینے میں جب مسلمان طلوع آفتاب سے غروب آفتاب تک روزہ رکھتے ہیں تو بھوکوں کو کھانا کھلانا خاص طور پر اہم ہے۔بھوکے کو کھانا کھلانے کے بہت سے طریقے ہیں۔ آپ فوڈ بینک یا سوپ کچن میں عطیہ کر سکتے ہیں، یا آپ کسی ایسے شخص کے لیے کھانا بنا سکتے ہیں جو اپنی ضروریات پوری کرنے کے لیے جدوجہد کر رہا ہو۔ آپ بے گھر پناہ گاہ یا کھانے کی پینٹری میں بھی اپنا وقت رضاکارانہ طور پر دے سکتے ہیں۔ اس بات سے کوئی فرق نہیں پڑتا ہے کہ آپ کس طرح مدد کرنے کا انتخاب کرتے ہیں، آپ کے احسان کا بدلہ اللہ ہی دے گا۔اسلام میں بھوکے کو کھانا کھلانے کے لیے چند اضافی نکات یہ ہیں:بھوکے لوگوں کی ضروریات کا خیال رکھیں۔ ان کی غذائی پابندیوں اور ثقافتی ترجیحات پر غور کریں۔سخی بنیں اور دل سے دیں۔ بدلے میں کسی چیز کی توقع نہ کریصبر کرو اور سمجھو۔ بھوکے لوگوں کے ساتھ اعتماد پیدا کرنے میں وقت لگ سکتا ہے۔مدد کرنے کے موقع کے لیے شکر گزار ہوں۔ بھوکوں کو کھانا کھلانا اللہ سے اپنی محبت ظاہر کرنے کا بہترین طریقہ ہے۔