رسول اللہ صلی اللہ علیہ وآلہ وسلم کے فضائل کا بیان

حضرت عطار بن یساررضی اللہ عنہ بیان فرماتے ہیں،
میں نے عبداللہ بن عمرو بن عاص رضی اللّٰہ عنہ سے ملاقات کی، اور میں نے کہا،مجھےخاتم النبیین رسول اللہ حضرت محمد صلی اللہ علیہ وآلہ وسلم کی اس صفت کے متعلق بتائیں جو تورات میں مذکور ہے ، انہوں نے فرمایا ٹھیک ہے ، اللہ کی قسم !
آپ کی جو صفات قرآن کریم میں ہیں، ان میں سے بعض تورات میں بھی مذکور ہیں ، جیسا کہ
.’’ اے نبی ! ہم نے آپ کو خوشخبری سنانے والا ، ڈرانے والا اور اَن پڑھوں (عربوں) کی حفاظت کرنے والا بنا کر بھیجا ہے ، آپ میرے بندے اور میرے رسول ہیں ، میں نے آپ کا نام متوکل رکھا ہے ، آپ نہ تو بد اخلاق ہیں اور نہ سخت دل ہیں ، آپ بازاروں میں شور و غل کرنے والے ہیں نہ برائی کا جواب برائی سے دیتے ہیں ، بلکہ آپ درگزر کرتے ہیں ، معاف کرتے ہیں ، اور اللہ ان کی روح قبض نہیں کرے گا حتی کہ وہ ان کے ذریعے ٹیڑھی ملت کو سیدھا کرا لے ، اور وہ ’’ لا الہ الا اللہ ‘‘ کا اقرار کر لیں اور وہ اس (کلمے) کے ذریعے اندھی آنکھوں کو قوت بینائی ، بہرے کانوں کو قوت سماعت اور غلاف میں بند دلوں کو کھول دے گا ۔‘‘۔
{ صحیح البخاری }

.حدیث # 5752 ، ابن ماجہ-1 ، اسلام 360

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں