غسل کب فرض ہوتا ہے؟

چار چیزوں میں سے کسی ایک چیز کی وجہ سے غسل فرض ہوتا ہے۔
۱، جنبی انسان پر غسل فرض ہوتا ہے۔
2۔عورت پر جب حیض سے پاک ہو تو غسل فرض ہوتا ہے
3۔عورت پر جب نفاس سے پاک ہو تو غسل فرض ہوتا ہے۔
4۔ زندوں پر مردہ کو غسل دینا فرض ہوتا ہے
چار چیزوں کی وجہ سے غسل مسنون ہوتا ہے۔
1-جمعہ کی نماز کے لئے
2۔عیدین کی نماز کے لئے ۔
3۔ احرام کے لئے
4۔حاجیوں کے لئے عرفہ میں سورج ڈھلنے کے بعد
غسل کب مستحب ہوتا ہے؟
مندرجہ ذیل صورتوں میں غسل مستحب ہوتا ہے۔
شعبان کی پندرھویں رات میں۔
شب قدر میں
سورج گہن کی نماز کے لئے اور چاند گہن کی نماز کے لئے ، بارش طلب کرنے کے لئے پڑھی جانے والی نماز کے لئے
گھبراہٹ کے وقت، تاریکی کے وقت ، سخت آندھی کے وقت
نئے کپڑے پہنتے وقت۔ حوالہ5
گناہوں سے توبہ کرنے والوں کے لئے۔
سفر سے آنے والے کے لئے
مدینہ منورہ میں داخل ہونے والے کے لئے
مکہ مکرمہ میں داخل ہونے کا ارادہ کرنے والے کے لئے
قربانی کے دن صبح مزدلفہ میں ٹہرتے وقت ، طواف زیارت کے لئے
میت کو غسل دینے والے کے لئے ۔
پچھنا لگوانے کے بعد
جنون سے افاقہ ہو جانے والے کے لئے ،اسی طرح بیہوشی اور نشہ سے افاقہ ہو جانے والے کے لئے غسل کرنا مستحب ہے
پاک ہونے کی حالت میں مسلمان ہونے والے کے لئے ، ہاں! اگر مسلمان ہونے والا جنبی ہو تو اس پر غسل فرض ہے

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں